Nazreen Se | To Readers | Zarb-e-Kaleem : 03

Nazreen Se

 

Nazreen Se

Nazreen Se with Urdu Tashreeh

پہلا شعر کی تشریح
معانی: ناظرین: دیکھنے والے عقل مند لوگ ۔ حقائق: حقیقتیں ۔ زجاج: شیشہ ۔ حریف سنگ: مقابلہ کرنے والا پتھر ۔
مطلب: جب تک تجھے زندگی کے حقائق سے آگاہی حاصل نہ ہو گی تیرا شیشہ پتھر کے مدمقابل آنے کی صلاحیت یا اس سے ٹکرانے کی طاقت پیدا نہیں کر سکتا ۔ مراد یہ ہے کہ اے ایشیائی اقوام تمہیں مغرب کے مدمقابل آنے کے لیے اپنے اندر صلاحتیں پیدا کرنی ہوں گی

دوسرا شعر کی تشریح
معانی: زورِ دست: ہاتھ کا بازور ۔ ضربت کاری: کاری چوٹ ۔ نوائے چنگ: باجے کی آواز ۔
مطلب: زندگی آسان نہیں ہے ۔ اس میں کامیاب ہونے کے لیے قوت بازو اور اپنی راہ کی رکاوٹوں پر سخت ضرب کاری لگانی پڑتی ہے ۔ زندگی خصوصاً ایشیائی اقوام کی مغربی اقوام کے مقابلے میں زندگی میدان جنگ میں اتر کر کامیاب ہو سکتی ہے ۔ اس لیے تم ساز کے طلب گار نہ بنو ۔ جنگ کے لیے جس قوت اور جن آلات کی ضرورت ہوتی ہے اس کے طالب بنو 

تیسرا شعر کی تشریح
معانی: سرمایہَ حیات: زندگی کا سامان ۔ فطرت: قدرت ۔ لہو ترنگ: خون کا سرخ رنگ ۔ جل ترنگ: پانی کے ساز کی آواز ۔
مطلب: اے ناظر! زندگی کا سرمایہ اپنے دل اور اپنے جگر کو خون کرنے سے پیدا ہوتا ہے ۔ یعنی خلوص اور محنت و مشقت سے ہاتھ آتا ہے ۔ تجھے معلوم ہونا چاہیے کہ فطرت لہو کے ساز کا نغمہ مانگتی ہے نہ کہ پانی کے ساز کا نغمہ ۔ مراد یہ کہ جو شخص اور جو قوم اپنا خون دینا جانتی ہو گی وہی کامیاب ہو گی اور جو محفل میں ساز کی آواز پر کان دھرے بیٹھی رہے گی وہ ناکام رہے گی 

Nazreen Se Urdu Roman

Jab Tak Na Zindagi Ke Haqaeeq Pe Ho Nazar
Tera Zujaj Ho Na Sake Ga Hareef-e-Sang

Ye Zor-e-Dast-o-Zarbat-e-Kari Ka Hai Maqam
Maidan-e-Jang Mein Na Talab Kar Nawa-e-Chang

Khoon-e-Dil-o-Jigar Se Hai Sarmaya-e-Hayat
Fitrat ‘Lahoo Tarang’ Hai Ghafil! Na ‘Jal Tarang

To Readers in English

Your glass can never match the stony rock,
Unless of facts with care you take the stock.

Give proof of strength and strike a dreadful blow,
When war is waging strains of harp forego.

The wealth of life is due to blood in veins,
O man remiss! love pain, shun melodious strains.

Full Book Zarb-e-Kaleem 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *